رنگ

تتلی کا سب سے پہلا اسٹیج کسی کو متوجہ نہیں کرتا ہے مگر قدرت نے اس میں اتنے خوبصورت رنگ چھپا کر رکھے اور جب وہ محنت کرتی ہے اور باہر آتی تو اسکے خوبصورت رنگ ہر ایک کو متاثر کرتے ہیں۔
 
ہمارے رب نے ہمیں بھی اسی طرح پیدا کیا بہت سی اچھی صلاحیت ہم میں چھپا رکھی ہیں،
ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اپنے آپ کو پہچانیں اپنی صلاحیت کو اجاگر کریں دنیا کے رنگ میں نہ رنگیں بلکہ اپنے رنگوں سے لوگوں کو متاثر کریں۔
 
انکے لیے مثال بنیں!!
Advertisements

محبت زندگانی ہے

بتاؤ کون کہتا ہے, محبت بس کہانی ہے
محبت تو صحیفہ ہے, محبت آسمانی ہے
محبت کو خدارا تم, کبھی بھی جھوٹ مت سمجھو
محبت معجزہ ہے__ معجزوں کی ترجمانی ہے
محبت پھول کی خوشبو, محبت رنگ تتلی کا
محبت پربتوں کی جھیل کا شفاف پانی ہے

محبت اک اشارہ ہے, وفا کا استعارہ ہے
محبت اک ستارہ ہے, فلک کی بیکرانی ہے

زمیں والے! بتاؤ کس طرح سمجھیں محبت کو
محبت تو زمیں پر آسمانوں کی نشانی ہے

محبت روشنی ہے, رنگ ہے, خوشبو ہے , نغمہ ہے
محبت اڑتا پنچھی ہے, محبت بہتا پانی ہے

محبت ماؤں کا آنچل, محبت باپ کی شفقت
محبت رب کی رحمت کا جہاں میں نقش ثانی ہے 

محبت ہے بہن کی اور ہے بھائی کی الفت بھی
محبت کھیلتا بچہ ہے اور چڑھتی جوانی ہے

محبت حق کا کلمہ ہے, محبت چاشنی من کی
محبت روح کا مرہم, دلوں کی حکمرانی ہے

محبت تو ازل سے ہے,محبت تا ابد ہوگی
محبت تو ہے آفاقی,زمانی نہ مکانی ہے

فنا ہو جاۓ گی دنیا, فنا ہو جائیں گے ہم تم,
محبت باقی رہ جاۓ گی,یہ تو جاودانی ہے

محبت کا احاطہ اور کن الفاظ سے ہوگا
محبت تو محبت ہے,محبت زندگانی ہے

میرا ایمان ہے، ہے وہ مردہ ضمیر

تیری ہستی سے ہستی ہماری وطن
جان واری یہ تجھ پر ہماری وطن
میرا ایمان ہے، ہے وہ مردہ ضمیر
عشق سے تیرے جو بھی ہے عاری وطن 


خون دے کر بزرگوں نے ہم پہ کیا
تیری صورت یہ احسان بھاری وطن
کر سکیں گے نہ وہ بال بیکا تیرا
ملت کفر مل جائے ساری وطن
تیرا دشمن نہ بھولے جو نسلوں تلک
ضرب دیں گے اسے وہ قہاری وطن
ہے  تاریخ شاہد، دشمنوں کی تیرے
بار ہا ہم نے گردن اتاری وطن
تو ہے ‘امتیاز’ کے ہر تخیل کی جاں
تیرے نغموں کا میں ہوں لکھاری وطن
شاعر: امتیاز عالم