Image

ماں جیسی ہستی دنیا میں ہے کہاں؟؟

My-mother-and-her-love

اللہ پاک نـے اپنی رحمت کے 100 حصے کیے , ان میں سے 99 اپنــے خزانے میں رکھے اور ایک حصہ پوری مخلوق پر بانٹ دیا, یہ اسی ایک حصہ رحمت کا صدقہ ھــے کہ سرکش گھوڑی بھی اپنا پاؤں ٹٹول کر رکھتی ھــے کہ کہیں بچے پر نہ پڑ جائـے اور اونٹنی تپتے صحراء میں گھنٹوں کھڑے رہ کر اپنے بچے کو سایہ دیئے رکھتی ھــے ورنہ چل پھر کر وہ دھوپ کی شدت میں کمی کر سکتی ھــے, ایک جگہ کھڑے ہو کر اپنے اوپر دھوپ کا فوکس کرنا اذیت ناک امر ھوتا ھــے, سیلاب میں ڈوبتی ماں بچے کو مرتے دم تک سینے سے لگائـے رکھتی ھــے, جلتی ہوئی ماں اپنـے بچے کو پکڑ کر کھڑکی سے باہر لٹکائـے رکھتی ھــے یہاں تک کہ اس کا ہاتھ اس حالت میں اکڑ جاتا ھــے اور فائر بریگیڈ والے آ کر اس بچے کو بچا لیتے ہیں , اس ماں کی محبت کا اندازہ لگائیں کہ جلتا ہوا بندہ کتنا تڑپتا ھــے مگر وہ سارا درد سہہ گئی اور اس ہاتھ کو حرکت نہیں دی جس میں بچہ پکڑ کر کھڑکی سے لٹکایا ہوا تھا

یہ سب اس ایک فیصد محبت کا کمال ھــے جو ساری مخلوق میں بانٹی گئی ھــے ۔ بھلا اس 99 حصوں والی محبت کا کیا عالم ہوگا جو صرف ایک ذات میں مرتکز ھــے ۔ ؟

Advertisements

One thought on “ماں جیسی ہستی دنیا میں ہے کہاں؟؟

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s